حج اور عمرہ ویزا

عمرہ کے ویزا کا آن لائن اسٹیٹس چیک کرنے کا طریقہ کار

This post is also available in: English

ہمارے بہت سے قارئین اور باقاعدہ ویب سإٹ وزیٹرز ہم سے عمرہ ویزا کااسٹیٹس آن لائن چیک کرنے کے لئے تفصیلی طریقہ کار کو لکھنے کی درخواست کرتےہیں۔ بہت سے عمرہ زائرین جو عمرہ ادا کرنے کے لئے سعودی عرب کی جانب رخ کرتےہیں وہ ابھی بھی مطلوبہ عمرہ ویزا کے عمل سے لاعلم ہیں اور خصوصاًً جب بات عمرہ ویزاکی ہو کہ یہ ویزا سعودی سفارتخانے کے ذریعہ دیا گیا ہے یا نہیں۔

کیا عمرہ زائرین کے لئےعمرہ ویزا کے عمل کو ٹریک کرنے کے لئے کوئی الیکٹرانک ذرائع یا آن لائن طریقہ کار ہے؟

ان لوگوں کے لئے جو ابھی تک لاعلم ہیں ، ہم ان کی توجہ اس حقیقت کی طرف مبذول کروانا چاہیں گے کہ حال ہی میں سعودی حکومت نے عمرہ ای سروس پورٹل متعارف کروایا ہے۔ یہ پورٹل عمرہ ویزا درخواست دہندگان کو پورٹل تک رسائی حاصل کرنے کی سہولت فراہم کرتا ہے جس کے ذریعے زائرین عمرہ ویزا کے بارے میں پوچھ گچھ کرسکتے ہیں۔



اس ای پورٹل کے ذریعہ عمرہ ویزا کے درخواست دہندگان اپنےعمرہ ویزا کے بارے میں کیسے معلومات لے سکتے ہیں؟

عمرہ ویزا کے لئے کوئی بھی درخواست دہندگان جنہوں نے پہلے ہی اپنے ملک میں واقع سعودی سفارتخانے کو عمرہ ویزا کے لئے مطلوبہ دستاویزات جمع کروادیے ہیں وہ مطلوبہ پورٹل پر اپنا پاسپورٹ نمبر درج کرکےعمرہ ویزا کے اسٹیٹس کی جانچ پڑتال کرسکتے ہیں۔

عمرہ ویزا درخواست دہندگان کے لئے اس عمرہ ای سروسز پورٹل کے ذریعے کیا کیاآسان ہو گیا ہے؟

سب سے پہلےعمرہ ویزا درخواست دہندہ کو اس پورٹل تک رسائی حاصل کرنا ہوگی ، جس کے بعد صرف اپنا پاسپورٹ نمبر درج کرکے انکوائری جنریٹ  کرنا ہے اور اسے فوراً ہی عمرہ ویزا کے اسٹیٹس کا پتہ چل جائے گا۔ سعودی حکومت کی جانب سے اس ای سروسز کے نفاذ کی وجہ سے ، عمرہ ویزا درخواست دہندگان کے لئے اپنی عمرہ ویزا کاپی کو آن لائن ٹریک کرنا، تصدیق کرنا اور پرنٹ کرنا بہت آسان ہو گیا ہے۔



اس سے قبل بھی عمرہ زائرین کی جانب سے اٹھائے گئے مختلف مسئلوں کو اس ای پورٹل سروس کے زریعےحل کیا گیا ہے

اب ان تمام عمرہ زائرین کی طرف سے کوئی شکایت کا سامنا نہیں ہوگا جو پہلے یہ شکایت کرتے تھے کہ ان کے آبائی ممالک میں ایجنٹ عمرہ ویزا کے لئے حد سے زیادہ پیسے وصول کرتے ہیں اور بعض اوقات وہ عمرہ ویزا فراہم کرتے ہیں لیکن ہوٹل ، ٹرانسپورٹ اور متعلقہ سہولیات فراہم نہیں کرتے ۔

جیسا کہ اوپر بتایا گیا ہے کہ اس ای سروسز پورٹل کے اجراء کے بعد ، اب کوئی ایجنٹ عمرہ ویزا درخواست دہندگان کو گمراہ نہیں کرسکتا اور عمرہ ویزا ہولڈر اب اس پورٹل کے ذریعے ویزا کے اجراء کی جانچ پڑتال کے بعد عمرہ ویزا فیس کی مطلوبہ رقم ادا کرسکتے ہیں۔

آن لائن عمرہ ویزا کا اسٹیٹس معلوم کرنے میں کون سے اقدامات شامل ہیں؟

پہلا مرحلہ

مذکورہ بالا (یہاں کلک کریں) لنک پر کلک کریں اور عمرہ ای سروسز پورٹل کھولیں تاکہ آپ کی عمرہ ویزا کی حیثیت کی چھان بین ہوسکے۔

دوسرا مرحلہ

دوسرے مرحلے میں ، آپ کو اپنی عمرہ ویزا کی حیثیت سے متعلق انکوائری کو بڑھانے کے لئے اپنی قومیت ، اپنا پاسپورٹ نمبر ، اور ویب سائٹ پرنظر آنے والا تصویری کوڈ درج کرنے کی ضرورت ہے



تیسرا مرحلہ

تیسرے مرحلے میں ، آپ کی مطلوبہ معلومات داخل کرنے کے بعد جیسا کہ دوسرے مرحلے میں بتایا گیا ہے ، یہ آپ کو آپ کے عمرہ ویزا کا اسٹیٹس دکھائے گا۔ اگر ابھی تک آپ کی درخواست سعودی سفارتخانے میں جمع نہیں کرائی گئی ہے تو ، اسکرین پر یہ پیغام ظاہر ہوگا»عمرہ ویزا کی کوئی درخواست موصول نہیں ہوئی۔

  • اہم نوٹ 

تیسرے مرحلے میں یہ اسکرین پر ظاہر ہوگا کہ آیا آپ کو عمرہ ویزا کی اضافی رقم ایس آر2000ادا کرنے کی ضرورت ہے یا نہیں۔ نیچے دیئے گئے اسکرین شاٹ میں ، اسے آسانی سے دیکھا جاسکتا ہے کیونکہ یہ واضح طور پر ظاہر ہوتا ہے کہ «عمرہ ویزا کے لئے ادائیگی کرنے کی ضرورت نہیں ہے»

تیسرے مرحلے میں ، آپ کو ایک اور پیغام مل سکتا ہے جو «عمرہ ویزا کی درخواست کو سفارتخانے کو بھیجا گیا ہے» کے بجإے «عمرہ ویزا کی درخواست دستیاب نہیں ہے» کے طور پرظاہر ہوتا ہے۔ یہ پیغام تب ہی ظاہر ہوگا جب آپ کی عمرہ ویزا درخواست سفارت خانے کوتو ارسال کی گئی ہے لیکن ابھی تک اس پر مہر نہیں لگائی گئی ہے۔ اسی اسکرین پر ، آپ ہوٹل کی  تفصیلات اور ٹرانسپورٹیشن کے ساتھ ساتھ ظاہر ہونے والے پیکیج کی تفصیلات بھی دیکھ سکتے ہیں۔



اہم نوٹ

زیادہ تر لوگ جب وہ اپنے وطن واپس آجاتے ہیں تووہ اپنے عمرہ ویزا کے اسٹیٹس کو آن لائن جاننا چاہتے ہیں۔ صرف ان لوگوں کی معلومات میں اضافہ کرنے کے لئے ، ایک بار جب کوئی عمرہ زائرین اپنے وطن واپس آجاتا ہے اور وہ واپس لوٹنے کے بعد آن لائن اپنی حیثیت کی جانچ پڑتال کرتا ہے تو یہ پیغام آن لائن ظاہر ہوتا ہے» سعودی عرب سے باہرنکل گئے ہیں۔

تازہ ترین خبریں: سعودی عرب کی حالیہ خبریں, حاصل کرنے کے لئے آپ ہمارے واٹس ایپ گروپ / فیس بک پیج میں شامل ہوسکتے ہیں ۔

Comment here