Uncategorized @ur

کفیل کی موت کے بعد حتمی اخراج کے لئے درخواست کیسے دی جاتی ہے؟

This post is also available in: English

سعودی عرب میں ، کفیل کی حکمرانی اعلٰی ترین تصور کی جاتی ہے۔ آپ کو ان کے احکامات پر ہر صورت عمل کرنا ہوگا ، اور آپ کے تمام معاملات میں ان پر مکمل انحصار کرنا پڑتا ہے۔ آپ اپنی نوکری تبدیل نہیں کرسکتے اور نہ ہی ان کی اجازت کے بغیر ملک چھوڑ سکتے ہیں۔ ان سخت قوانین کی وجہ سے غیر ملکیوں کے لئے مملکت میں کام کرنا مشکل ہوگیا ہے۔

لیکن روزگار کے  اس مستقل مرکز نے ان مہاجروں کو اس قدر راغب کیا ہے کہ وہ ہر مشکل کا سامنا کرنے کو تیار ہیں۔ حال ہی میں ، یہ بات خبروں کی شہ سُرخی بنی۔ جب کفالت کے نظام پر پابندی عائد کرنے کا حکم جاری کیا گیا تھا تاکہ مملکت میں کام کرنے والے غیر ملکیوں کو آزادی کی اجازت دی جاسکے۔ تاہم ، فیصلہ زیادہ دیر تک قائم نہ رہ سکا اور فوراََ ہی واپس ٖلے لیا گیا۔ کفیل پر منحصر ہونے کی وجہ سے ، آپ کو ہر کام کے لیئے بار بار اس کی طرف رجوع کرنے کی ضرورت ہے۔

لیکن کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ اسپانسر کھو گیا تو کیا ہوگا؟ اگر کفیل تیار نہیں ہے تو آپ کفالت کیسے بدلواؤ گے؟ اگر کفیل مرچکا ہے تو اس کیس میں ممکنہ نتیجہ کیا ہوسکتا ہے؟ یہ سب  بنیادی سوالات ہیں جن کے مناسب جوابات درکار ہیں۔ لہذا آپ پریشان نہ ہوں کیوں کہ ہم ان کا جواب ایک ایک کر کے دیں گے۔ اس مضمون میں کفیل کی موت کے بعد حتمی اخراج سے متعلق اہم باتوں کی وضاحت کی گئی ہے۔ تو نیچے سکرول کیجئیے اور مکمل مضمون پڑھیئے



کفیل سعودی عرب میں ہر چیز پر حکمرانی کرتا ہے

سعودی عرب میں ، عوامی زبان میں اسپانسر کو کفیل کہتے ہیں ، اور سرکاری زبان میں ، اسے آجر کی حیثیت سے پکارا جاتا ہے۔ نام کوئی بھی ہو ، کفیل ، بہت بڑی ذمہ داری رکھتے ہیں۔

مملکت میں غیر ملکیوں کی بڑھتی ہوئی تشویش کیا ہے؟

اجیل ویب سائٹ کے مطابق ، جب اچانک ان کے کفیل کی موت واقع ہوجاتی ہے تو سینکڑوں غیر ملکی کارکنان کو یہ مشکل پیش آتی ہے۔ کہ کفیل کے بغیر وہ ملازمت کا معاہدہ ختم نہیں کرسکتے اور نہ ہی سرکاری اداروں سے رجوع کرسکتے ہیں اور نہ ہی اپنے آبائی ملک واپس جا سکتے ہیں۔

ایک مقامی شہری نے محکمہ پاسپورٹ(سعودی الجوازات) سے کیا  سوال پوچھا؟

ایک ہندوستانی ڈرائیور نے محکمہ پاسپورٹ کی ویب سائٹ پر ایک سوال بھیجا کہ

میری کفیل خاتون 19 ماہ قبل فوت ہوگئی تھی۔ حتمی اخراج پر گھر جانے کے لئے کیا کرنا ہوگا؟



محکمہ پاسپورٹ(سعودی الجوازات) نے کیا جواب دیا؟

محکمہ پاسپورٹ(سعودی الجوازات) نے ان کے سوال کے جواب میں کہتے ہوئے یہ کہا

ایسی صورت میں ، غیر ملکی کارکن اپنے کفیل کے ورثاء میں سے کسی کے ذریعے حتمی اخراج بنوا سکتا ہے۔ اس کے لئے  غیر ملکی کارکن اور کفیل کے ورثاء میں سے کسی ایک فرد کو مشترکہ درخواست جمع کروانے کی ضرورت ہوگی۔

اگرچہ اسپانسر کے ورثاء کوتلاش کرنا اور اس کام کے لئے تیار کرنا مشکل عمل ہے مگرسعودی عرب سے باہر جانے کا یہ واحد راستہ ہے۔لہذاء خود کو بے بس سمجھنے کی بجائے حل نکالنے کی کوشش کرنی چاہیے۔ ہم دُعا گو ہیں کہ ہر غیر مُلکی ملازم اس نازک صورتحال سے محفوظ رہے اور ہم خواہشمند ہیں کہ تمام تارکینِ وطن دوسرے مُلکوں میں امن و سکون کی زندگی بسر کریں۔ براہِ مہربانی اس تحریر کو زیادہ سے زیادہ شئیر کریں تاکہ مزید لوگ اِس سے فائدہ اُٹھا سکیں.

تازہ ترین خبریں: سعودی عرب کی حالیہ خبریں, حاصل کرنے کے لئے آپ ہمارے واٹس ایپ گروپ / فیس بک پیج میں شامل ہوسکتے ہیں ۔

Comment here